ایم کیو ایم کے زیر اہتمام ایام ہجرت کے سلسلے میں مشاعرہ،مکالمہ اورمحفل سماں قوالی کے پروگرام رکھے گئے ہیں،فیصل سبزواری

معزز سپریم کورٹ آف پاکستان سندھ حکومت کیخلاف ریمارکس نہیں فیصلے کرے،فیصل سبزواری

ان خیالات کا اظہار مرکز بہادر آباد پر ابطہ کمیٹی کے رکن وسینیٹر فیصل سبزواری کا اراکین رابطہ کمیٹی کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب
کراچی۔۔ 22ستمبر2021ء

متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کی رابطہ کمیٹی کے رکن وسینیٹر فیصل سبزواری نے کہا کہ پاکستامیں تمام قومیتیں اپنا کلچر ڈے مناتی ہیں، ایم کیوایم 24تا26ستمبرایام ہجرت منائے گی جبکہ 2اکتوبر کو حیدرآباد میں شہری سندھ کے حقوق کیلئے ریلی کاانعقاد کیا جائیگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز بہادر آباد پر اراکین رابطہ کمیٹی خالد سلطان،شکیل احمد،ارشاد ظفیر،ابوبکر،اسلم آفریدی ودیگر کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران کیا۔فیصل سبزواری نے کہا کہ مہاجر قوم ایک زمین و خطے سے تعلق نہیں رکھتی تھی بلکہ بھارت کے شمال وجنوب وسط پورے بھارت میں تھے،بھارت سے ہجرت کرکے آنے والوں نے فخر سے اپنے آپ کومہاجر کہلوایا، ایام ہجرت کے سلسلے میں ایم کیو ایم پاکستان کے زیر اہتمام مشاعرہ،مکالمہ اوربرصغیر میں فخرسے منانے والی محفل سماں قوالی کا پروگرام رکھے گئے ہیں اور تحریک پاکستان اور پاکستان کی خاطر لاکھوں جانوں کی قربانیاں دینے کی تاریخ عوام کے سامنے رکھیں گے۔فیصل سبزواری نے مزید کہا کہ حیدرآباد اور شہری سندھ کے نوجوانوں کو نوکریوں سے محروم رکھا جارہا ہے،حیدرآباد کے ہسپتالوں سے وینٹی لیٹر ز لاڑکانہ منتقل کرد ئے جاتے ہیں،پچھلے چالیس سال سے سند ھ کی متعصب نسل پرست حکومت نے کراچی،حیدرآباداور شہری سندھ کاناہی صحت کا نظام درست کیا،نا تعلیم کا نظام درست کیا ہے، سڑکیں موہنجو داڑو کا منظر پیش کررہی ہیں اور یہاں تک کے کورونا ویکسین فائزر جو سندھ حکومت کے ہاتھ آئی ہے اس کو بھی عوام کو نہیں لگا رہی اب ویکسین ایکسپائرہونے کے مراحل میں داخل ہورہی ہیں،سندھ کے صحت کا بجٹ کھربوں روپے کا ہے مگرآپ ہسپتالوں میں جاکر دیکھ لیں ہسپتال کھنڈرات میں تبدیل ہو چکے ہیں،سرکاری سطح پر وسائل کو لوٹنا سندھ حکومت کیلئے عام بات ہے۔انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت بلدیاتی معاملات سمیت تمام امورمیں قانون کی خلاف ورزی کرتی آئی ہے،ہم سپریم کورٹ سے درخواست کرتے ہیں کہ صرف ریمارکس سے مسائل حل نہیں ہونگے،معزز سپریم کورٹ آف پاکستان سندھ حکومت کیخلاف ریمارکس نہیں فیصلے کرے۔